Latest Urdu News from Pakistan & the World. Latest Breaking Urdu News about Politics, Sports, Business,Showbiz, Politics, Cricket, Technology, Fashion and more

- Advertisement -

چین پاکستان کو مسلم ممالک کی قیادت کرتے دیکھنے کا خواہشمند

چین کا کہنا ہے کہ پاکستان ایٹمی قوت رکھنے والا واحد مسلم ملک ہے چاہتے کہ مسلم دنیا کو لیڈ کرے،سفارتی ذرائع

- Advertisement -

64

- Advertisement -

اسلام آباد (اردو نیوز) چین چاہتا ہے کہ پاکستان مسلم دنیا کو لیڈ کرے۔تفصیلات کے مطابق چین ہر موقع پر پاکستان کی حمایت میں آواز بلند کرتا ہے۔ایک بار پھر چین نے پاکستان کی حمایت میں آواز بلند کی ہے۔سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ چین چاہتا ہے کہ مسلم ممالک میں واحد ایٹمی ملک پاکستان مسلم ممالک کو لیڈ کرے۔اس وقت میڈیا پر یہ باتیں گردش کر رہی ہیں کہ چین خطے میں ایک نیا بلاک بنانے جا رہا ہے اور چین کا ایران کی طرف جھکاؤ بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے۔

 

یہ بھی پڑھیں:پاکستان اسرائیل کو تسلیم نہیں کر سکتا، وزیراعظم عمران خان کا دو ٹوک اعلان

in urdu news,urdu news,urdu news of pakistan,urdu news from pakistan,urdu news pakistan,
in urdu news,urdu news,urdu news of pakistan,urdu news from pakistan,urdu news pakistan,

- Advertisement -

بیجنگ تہران کے ساتھ 400 بلین ڈالر کی سرمایہ کاری کے حوالے سے 25 سالہ اسٹریٹجک شراکت داری کے معاہدے کو حتمی شکل دینے کے قریب ہے۔چین کے پاس خطے میں اپنا اثر و رسوخ بڑھانے کے لیے مسلم ممالک میں اپنی اہمیت بڑھانے کا اہم موقع ہے۔

پاکستان نے سعودی عرب کے دباؤ پر کوالالمپور سمٹ میں بھی شرکت نہیں کی تھی۔جس پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان کو کچھ دوستوں کو قائل کرنے کے لیے وقت درکار تھا، انکا خدشہ تھا کہ او آئی سی سے متبادل بلاک بنایا جا سکتا ہے،

 

یہ بھی پڑھیں:سعودی فرمانروا اور ولی عہد کی جانب سے پاکستانی قیادت کے نام خصوصی پیغام

- Advertisement -

news in urdu
news in urdu

پاکستان نے مسلم امہ کو تقسیم ہونے سے بچانے کے لیے یہ فیصلہ کیا۔

او آئی سی کے کم فعال کردار پر ملائشیاء، ترکی، انڈونیشیا،قطر، ایران، شام، یمن اور لبنان سمیت متعدد مسلم ممالک کو تحفظات ہیں۔ ذرائع کے مطابق انہی تحفظات کے باعث کولالمپور سمٹ کو متبادل پلیٹ فارم کے طور پر دیکھا جا رہا تھا۔

تاہم جب وزیراعظم عمران خان نے ملائیشیا کا دورہ کیا تو ہم منصب کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہ میں کہنا چاہتا ہوں کہ میں بہت افسردہ تھا کہ دسمبر کے وسط میں کوالالمپور میں ہونے والی کانفرنس میں شرکت نہ کرسکا.وزیراعظم نے کہا کہ ’بدقسمتی سے پاکستان کے بہت قریب ہمارے کچھ دوستوں کو یہ محسوس ہوا کہ شاید یہ کانفرنس امہ کو تقسیم کردے گی جو واضح طور پر ایک غلط فہمی تھی کیوں کہ کانفرنس کے انعقاد سے ظاہر ہوتا ہے کہ اس کا مقصد امہ کی تقسیم نہیں تھا.

 

 

 

وزیراعظم نے کہاکہ وہ کانفرنس میں شرکت کے منتظر تھے کیوں کہ وہ سمجھتے ہیں کہ مسلمان ممالک کا مغربی دنیا اور غیر مسلم ممالک کو اسلام کے بارے میں آگاہی دینا انتہائی اہم ہے.انہوں نے کہا کہ تمام غلط فہمیوں کے پیشِ نظر چاہے وہ دانستہ ہوں یا غیر دانستہ یہ اہم ہے کہ مسلمان ممالک ہمارے نبی ﷺ کے حقیقی پیغام کے بارے میں بتائیں.

انہوں نے ایک مرتبہ پھر ملائیشیا میں ہونے والی کانفرنس میں شرکت نہ کرنے پر افسوس کا اظہار کیا تاہم آئندہ برس کوالالمپور سربراہی اجلاس میں شرکت کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں وزیراعظم نے کہا کہ بالکل وہ کریں گے کیوں کہ اب یہ بات واضح ہے کہ کوالالمپور اجلاس نے امہ کو تقسیم نہیں کیااگر کوئی چیز امہ کو متحد کرتی ہے تو وہ ضرور آنا پسند کریں گے۔

- Advertisement -

- Advertisement -

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.